بہنوئی کےمقتولہ حراسےتعلقات کا انکشاف



لاہور میں شادی سے تین روز قتل ہونے والی حرا کے کیس میں چونکا دینے والی تفصیلات سامنے آگئیں۔ مقتولہ کے بہنوئی احسن نے پولیس کو بیان دے دیا۔  احسن نے شادی سے محض تین دن پہلے حرا کو بلایا، تکرار کے دوران طیش میں آکر گولی چلادی۔ احسن کا کہنا تھا پہلی گولی لگنے کے بعد حرا کو قتل کرنے کا سوچا کیونکہ اگر وہ بچ جاتی تو وہ پکڑا جاتا۔

پولیس نے دعویٰ کیا ہے کہ ملزم نے مقتولہ کے ساتھ تعلقات کا بھی اعتراف کیا ہے۔ مقتولہ حرا کے موبائل فون کی سی ڈی آر کے مطابق دونوں میں ساڑھے بارہ ہزار پیغامات کا تبادلہ ہوا۔ فون ریکارڈ کے مطابق گزشتہ تین ماہ کے دوران ملزم اور مقتولہ پانچ بار ایک ہی مقام پر پائے گئے۔ قتل سے چار روز پہلے حرا مسجد میں چندہ دینے کے بہانے بھی ملزم سے ملنے گئی۔ پولیس کا کہنا ہے ملزم نے مقتولہ کی قابل اعتراض ویڈیو بھی بنائی تھی جو بعد میں ڈیلیٹ کردی تھی، ملزم احسن کا فون فرانزک کے لیے بھجوادیا گیا ہے۔

گلبرگ کی رہائشی حرا کو گزشتہ  جمعرات کو گھر سے بلاکر قتل کیا گیا تھا، ملزم قتل کے بعد فرار ہوگیا تھا، پولیس نے حرا کے موبائل فون سے ٹریس کرکے گوجرانوالہ سے گرفتار کیا۔

کوئی تبصرے نہیں

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.