کرکٹ لیجنڈ سر جیفری بائیکاٹ کا اپنا محل ساڑھے 28 لاکھ پاؤنڈ میں فروخت کرنے کا فیصلہ



برطانوی کرکٹ لیجنڈ سر جیفری بائیکاٹ نے اپنا محل جیسا گھر  اٹھائیس لاکھ پچاس ہزار پاؤنڈ اسٹرلنگ میں فروخت کرنے کا فیصلہ کرلیا۔

سر جیفری اور ان کی اہلیہ راشیل چاہتی ہیں کہ وہ برطانیہ کے علاقے یارک شائر سے چیشائر اپنی بیٹی کے باس منتقل ہوجائیں جن کے ہاں حال ہی میں بیٹے کی ولادت ہوئی ہے۔


 مسز جیفری بائیکاٹ کا کہنا ہے کہ ان کی بیٹی کو ان کی ضرورت ہے اور وہ اپنی بیٹی کے کاموں میں ہاتھ بٹانا چاہتی ہیں۔
اناسی سالہ سر جیفری کو یارک شائر کے عوام پوجنے کی حد تک محبت کرتے ہیں اور ان کا بھی یارک شائر چھوڑنے کو دل نہیں چاہتا، لیکن بیٹی کی وجہ سے انہوں نے یہ مشکل فیصلہ کیا ہے۔


 سر جیفری بائیکاٹ نے چھ سال قبل یہ محل نما مکان خریدا تھا جس میں اپنی مرضی سے تبدیلی بھی کروائی تھی۔ اس وقت اس محل میں گیارہ بیڈروم اور ایک کمرہ استقبالیہ ہے۔ اس کے ساتھ ہی اس میں ایک انتہائی خوبصورتی سے تراشا ہوا باغ بھی ہے۔


سر جیفری بائیکاٹ نے حال ہی میں کینسر جیسے موذی مرض کو شکست دی ہے اور ان کا گزشتہ سال  دل کا بائی پاس آپریشن بھی ہوا ہے تاہم وہ خوش و خرم ہیں اور کہتے ہیں کہ خوش رہنے کے لیے خوشیاں بانٹنا ضروری ہے۔



کوئی تبصرے نہیں

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.