تیسرے درجے کی ٹیم کے سامنے عالمی نمبرون بےبس



ناقص سلیکشن،بے اثر بولنگ، فلاپ بیٹنگ۔سری لنکا کے خلاف پہلے ٹی ٹوئنٹی کے نتیجے نے قلعی کھول دی۔ کیسے عالمی نمبرون ٹیم سری لنکا کی تیسرے درجے کی ٹیم کے سامنے بے بس نظرآئی۔


ٹیم منیجمنٹ نے سلیکشن کو سنجیدہ ہی نہیں لیا۔ ان فارم فخرزمان اور حارث سہیل کو باہر کرکے بار بار کے آزمائے ہوئے احمد شہزاد اور نام نہاد ٹیلنٹڈ  عمراکمل  کو ٹیم میں شامل کیا۔ دونوں بری طرح ناکام رہے، احمد شہزاد صرف چار رنز بناسکے جبکہ  عمراکمل نے کھاتہ کھولنے کی زحمت بھی نہیں کی۔تین آدھے تیتر آدھے بٹیر آل راونڈر عماد وسیم، فہیم اشرف اور  شاداب خان  نہ تو بولنگ میں کمال دکھا سکے اور نہ ہی بیٹنگ میں کارکرکردگی دکھائی۔

ناتجربہ کار سری لنکا نے بے اثر بولنگ کا فائدہ اٹھایا،  غیرمعیاری فیلڈنگ نے بھی ان کا بھرپور ساتھ دیا اور پھر روایتی بیٹنگ بابر ناکام ہوئے تو ٹیم ہی بیٹھ گئی۔ سرفراز اونچے شاٹ نہ کھیل سکے، افتخار رن آؤٹ ہوئے ، ہارڈ ہٹر آصف علی  کو ایک اور چانس ملا لیکن وہ ہمیشہ کی طرح فلاپ ہوگئے۔


کوئی تبصرے نہیں

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.