صدام کے عراق میں یہ کیا ہورہا ہے؟



 عراق میں کرپشن،بےروزگاری اورحکومت کی معاشی پالیسیوں کےخلاف لوگ سڑکوں پر نکل آئے۔منگل کو بغداد سےشروع ہونےوالا احتجاج ملک بھر میں پھیل گیا۔ پولیس نےمظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے شیلنگ کے ساتھ گولیاں بھی چلائیں،  پولیس اور مظاہرین کے درمیان جھڑپوں میں اب تک بیس افراد ہلاک اور سیکڑوں زخمی ہوچکے ہیں۔

 حکومت نے احتجاج روکنےکے لیے ہر حربہ استعمال کیا، کئی شہروں میں کرفیو نافذ کردیا ہے اورانٹرنیٹ سروس بھی معطل ہے لیکن ملک گیر احتجاج کا سلسلہ نہ رک سکا۔  بغداد میں مظاہرین نے کرفیو توڑتے ہوئےتحریراسکوائرپرڈیراجمادیا اور طویل دھرنے کے لیے تیار ہیں۔ مظاہرین کہتے ہیں حکومت انہیں بجلی اور روزگار دینے میں ناکام ہوگئی ہے۔

کوئی تبصرے نہیں

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.