لیڈی کانسٹیبل وکیل گردی کاشکار



 پنجاب پولیس اپنی ہی لیڈی کانسٹیبل فائزہ نواز کوانصاف دلانے میں ناکام ہوگئی۔ پنجاب پولیس کی سنگین غلطی کی وجہ سے لیڈی کانسٹیبل پر تشدد کرنےوالاوکیل ضمانت پررہاہوگیا۔ فیروزوالا میں گاڑی غلط پارک کرنےسےمنع کرنےپر وکیل احمدمختار نےلیڈی کانسٹیبل فائزہ  کو تھپڑ اور ٹھڈے مارے تھے۔ لیڈی پولیس اہلکارنے وکیل احمد مختار کے خلاف  مقدمہ درج کرایا۔

 پولیس نےاسی لیڈی کانسٹیبل کے ہاتھ میں ہتھکڑیاں تھماکر ملزم کو عدالت میں پیش کیا لیکن پنجاب پولیس نے ایف آئی آر میں غلطی کی۔ ملزم کا نام احمد مختارکی جگہ احمدافتخارلکھ دیا،نام غلط ہونے کی وجہ سے ملزم کو ضمانت مل گئی۔ اپنی ہی لیڈی کانسٹیبل کی ایف آئی آر میں اتنی بڑی غلطی کرنے والی پنجاب پولیس کی کارکردگی پر مزید سوال اٹھ گئے۔

فیروز والا کی لیڈی کانسٹیبل نے وزیراعظم اوروزیراعلیٰ پنجاب سےانصاف کی اپیل کردی۔ لیڈی کانسٹیبل فائزہ نے بتایا وکیل احمد مختیار کو ہتھکڑی لگا کر عدالت میں پیش کیا، احاطہ عدالت میں وکیلوں نے دباؤ ڈال کر ملزم احمد مختار کی ہتھکڑیاں کھلوا دیں، ان پر بھی دباؤ ڈالا گیا کہ ایک خاتون پولیس اہلکار کچھ نہیں کر سکتی۔وزیراعظم اور وزیراعلیٰ پنجاب معاملے کا نوٹس لیکر انصاف فراہم کریں۔

کوئی تبصرے نہیں

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.