وفاقی کابینہ کی رمضان المبارک میں سحروافطار پر بجلی کی فراہمی یقینی بنانے کی ہدایت


Firdous Ashiq Awan briefing media about Federal Cabinet decisions

وزیراعظم کی وزارت اطلاعات و نشریات کی معاون خصوصی ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہاکہ کابینہ نے توانائی کے مسئلے کا تفصیلی جائزہ لیا ہے اور توانائی ڈویژن کو رمضان المبارک کے دوران سحروافطار کے اوقات میں لوڈشیڈنگ نہ کرنے کی ہدایت کی۔

منگل کو اسلام آباد میں وفاقی کابینہ کے اجلاس میں کیئے گئے فیصلوں کے بارے میں صحافیوں کو بریفنگ دیتے ہوئے معاون خصوصی نے کہاکہ کابینہ نے کئی علاقوں میں ماہِ مبارک میں  سحروافظار کےدوران بجلی کی لوڈشیڈنگ پرتشویش کا اظہار کیا ۔

توانائی کےوفاقی وزیر عمر ایوب نے کہا وہ سحراورافطارکے دوران ان ساٹھ فیڈروں پربھی بجلی فراہم کرناچاہتے تھے جو لوڈمینجمنٹ کے تحت آتے ہیں لیکن لائن لاسز اورچوری کی وجہ سے ایساممکن نہیں ہوسکتا۔

عمرایوب نے کہاکہ گزشتہ پانچ ماہ کے دوران بجلی چوروں کے خلاف بھرپور مہم کے دوران اکسٹھ ارب روپے وصول کئے گئے ہیں۔

اس مہم کے دوران چارہزاردوسوپچیس افرادکوگرفتارکیاگیااورنادہندگان کے خلاف ستائیس ہزار مقدمات دائرکئے گئے۔
عمرایوب خان نے کہاکہ گزشتہ حکومت گردشی قرضے کی مد میں چارسوپچاس ارب روپے کابوجھ چھوڑ کرگئی۔انہوں نے کہاکہ امیدہے کہ آئندہ دوسال میں اس بوجھ میں کمی کی جائے گی ۔

انہوں نے کہاکہ لائن لاسزپرقابوپانے کے لئے آئندہ چارسال میں الیکٹرک میٹرنگ کو یقینی بنایاجائے گا۔انہوں نے کہا ہے کہ اگلے بجٹ میں عوامی خواہشات کو مدنظررکھاجائے گا اور پارلیمنٹ کے آئندہ اجلاس سے قبل تمام اتحادی جماعتوں کواعتماد میں لیاجائے گا۔

فردوس عاشق اعوان نے کہاکہ وزیر تعلیم شفقت محمود نے کابینہ کو تیس ہزار مدارس کو قومی دھارے میں لانے سے متعلق اقدامات کے بارے میں بتایا ۔

انہوں نے کہاکہ انھیں وزارت سے مربوط کیاجائے گا اوروہ آزادانہ طورپر کام کریںگے ۔

وزیرتعلیم نے کابینہ کو بتایاکہ ان مدارس کی ایک ہی جگہ رجسٹریشن اوران کو فراہم کیئے جانے والے فنڈز کی نگرانی ضروری ہے ۔
وزارت تعلیم ان مدارس میں زیرتعلیم غیرملکی طالب علموں کو تعاون اور سہولتیں بھی فراہم کرے گی۔
اس کے علاوہ مدارس کے طلباء کی پیشہ وارانہ تربیت اور استعداد کار انہیں گریجویشن کے بعد روزگار کمانے کا موقع فراہم کرنے کیلئے بھی ضروری ہے ۔

کابینہ نے پاکستان اور برازیل کے درمیان تکنیکی تعاون کے بارے میں معاہدے کی توثیق کی ۔

اجلاس میں سیکورٹیز اینڈ ایکس چینج کمیشن کی سالانہ رپورٹ کی بھی منظوری دی گئی جو کابینہ کوپیش کی جائے گی۔

وزیراعظم کی معاون خصوصی نے کہاکہ کابینہ نے وزارتوں اور سرکاری شعبے کے اداروں میں انٹرٹیمنٹ اور تحائف کیلئے بجٹ ختم کرنے کی بھی منظوری دی اجلاس میں ایکسپورٹ پروسیسنگ زون کے قائم مقام چیئرمین کی مدت میں توسیع کی منظوری دی گئی ۔
کابینہ نے یہ فیصلہ بھی کیاکہ تین ماہ بعد کوئی اضافی چارج نہیں دیاجائے گا اور تمام وزارتوں اور ڈویژنوں میں تمام آسامیوں کوپرکیاجائے گا ۔

توانائی کے وزیرعمرایوب نے اس موقع پرگفتگوکرتے ہوئے کہاکہ بجلی چوری کے مسئلے پر بڑی حد تک قابوپالیاگیاہے۔
انہوں نے کہاکہ ملک بھرکے کل آٹھ ہزارسا ت سوتراسی فیڈرز میں سے اسی فیصدپرکوئی لوڈشیڈنگ نہیں کی جارہی ہے۔
فردوس عاشق اعوان نے کہاکہ عمران خان کے وعدے کے مطابق کابینہ نے وزیراعظم ہائوس میں پاک چائناانجینئرنگ یونیورسٹی قائم کرنے کی بھی منظوری دی ہے۔

انہوں نے کہاکہ یونیورسٹی کے لئے چین کی حکومت گرانٹ فراہم کرے گی جس کومحققین کیلئے شاندارکارکردگی کامرکزبنایاجائے گا۔

انہوں نے کہاکہ کابینہ نے انچاس کروڑبائیس لاکھ ڈالر کے ٹیلی ناراورجازسیلولرکمپنیوں کے لائسنسوں کی پندرہ سال کے لئے تجدیدکی منظوری دی جس میں ایک ارب سینتیس کروڑ روپے آمدن ہوگی۔

انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہاکہ کابینہ نے شبرزیدی کی فیڈرل بورڈآف ریونیو نے نئے سربراہ کی حیثیت سے تقرری کی بھی باضابطہ منظوری دی۔

ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے ایک اورسوال کے جواب میں کہاکہ ذخیرہ اندوزوں، ضروری اشیاء کے مختلف کارٹلزاوربدعنوان افسروں کے لئے حکومت کے ہاں بالکل کوئی گنجائش نہیں جو عوام کے لئے مشکلات پیداکرتے ہیں۔


کوئی تبصرے نہیں

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.