گرین شرٹس کا فلاپ شو سے ورلڈکپ کا آغاز




پاکستان ورلڈکپ میں اپنا پہلا میچ ہار گیا، ویسٹ انڈیز نے میچ باآسانی سات وکٹوں سے جیت لیا۔ ناٹنگھم میں  پاکستان کے ٹاپ آرڈر سے ٹیل اینڈرز تک  ناکامی کی ایک اور داستان، پوری ٹیم بائیس اوور میں ڈھیر ہوگئی ۔ پچاس اوورز کا میچ، ساڑھے تین گھنٹے کی اننگز لیکن  پاکستانی ٹیم آدھے اوورز بھی وکٹ پر نہ ٹھہرسکی اور گیارہ کھلاڑیوں نے ہائی اسکورنگ  وکٹ پربمشکل ایک سو پانچ رنز بنائے جس میں وہاب اور عامر کے آخری وکٹ کے لیے بائیس رنز کی شراکت بھی شامل ہے۔

 فخرزمان اور بابر اعظم بائیس بائیس رنز کے ساتھ ٹاپ اسکورر رہے۔  وہاب ریاض اٹھارہ  اور محمدحفیظ سولہ رنز کے ساتھ دیگر نمایاں بلے باز رہے۔ویسٹ انڈین بولرز نے گرین شرٹس کو سنبھلنے نہ دیا اور سات کھلاڑی ڈبل فیگر میں بھی داخل نہ ہوسکے۔ حارث سہیل اور سرفراز احمد آٹھ آٹھ، امام الحق دو ، حسن علی اور عماد وسیم ایک ایک اور شاداب خان صفر پر چلتے بنے۔ ۔  تھامس نے چار،جیسن ہولڈرنے  تین اور آندرے رسل نے دو وکٹیں حاصل کیں۔ 

ویسٹ  انڈیز نے ہدف چودہویں اوور میں پورا کرلیا۔ جلاد صفت کرس گیل نے تین چھکوں اور چھ چوکوں کی مدد سے پچاس رنز بنائے، محمد عامر تین وکٹیں حاصل کیں لیکن کم ہدف کا دفاع بولرز کے لیے مشکل تھا۔ چار وکٹیں لینے والے تھامس کو مین آف دی میچ قرار دیا گیا۔ پاکستان اس میچ میں ورلڈکپ کی دوسری کم ترین اسکور پر آؤٹ ہوگئی،  ورلڈکپ کی تاریخ میں پاکستان کا کم ترین اسکور چوہتر ہے ، عمران خان کی قیادت میں انیس سو بانوے میں انگلینڈ کے خلاف قومی ٹیم چوہتر رنز پر ڈھیرہوئی تھی۔ قومی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد کہتے ہیں آج کا دن ٹیم  کےلئےبہت برا تھا،بیٹنگ لائن مکمل فلاپ رہی جس کا نقصان ہوا، عامر کا وکٹیں لینا خوش آئند ہے، کوشش ہوگی دیگر میچز میں غلطیاں نہ دھرائیں۔


کوئی تبصرے نہیں

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.