مدعی کے بعد سب سے بڑا گواہ بھی چل بسا



 اصغرخان کیس کےاہم کرداریونس حبیب طویل علالت کےبعدکراچی میں انتقال کرگئے۔ یونس حبیب کی نماز جنازہ بدھ کو عشاء کے بعد  ڈیفنس کی مسجد بیت السلام میں ادا کی گئی۔  گردوں اور کینسر سمیت کئی دیگر بیماریوں میں مبتلا یونس حبیب کئی دنوں سے آغاخان اسپتال میں زیر علاج تھے۔

یونس حبیب مہران بینک کےسربراہ رہے۔  ائیرمارشل ریٹائرڈ اصغر خان نے سپریم کورٹ میں دائر کردہ کیس میں الزام عائد کرتے ہوئے کہا تھا کہ انیس سو نوے کے انتخابات میں بے نظیر بھٹو کو شکست دینے کے لیے مہران بینک کے مالک یونس حبیب نے سیاستدانوں میں رقوم تقسیم کی تھیں۔ یونس حبیب نےمارچ دوہزار بارہ میں سپریم کورٹ میں بذریعہ ایفی ڈیوٹ اعتراف کیا تھا کہ انہوں نےنوازشریف سمیت دیگرسیاست دانوں کورقم دی تھی۔

سپریم کورٹ میں زیر سماعت اصغر خان کیس تو منطقی انجام کو نہ پہنچ سکا لیکن کیس کے مدعی اصغر خان کے بعد سب سے بڑے گواہ یونس حبیب بھی چل سکے۔


کوئی تبصرے نہیں

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.