کراچی کی ننھی نشوہ چل بسی



کراچی کے لیاقت نیشنل اسپتال میں  زیر علاج کمسن بچی نشویٰ چل بسی۔ اسپتال کے ترجمان نے نشوہ کی موت کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ بچی کا دماغ اکہتر فیصد مفلوج ہوچکا تھا۔

ننھی نشوہ گلستان جوہر میں واقع دارالصحت اسپتال میں داخل تھی جہاں چھ اپریل کو غلط انجکشن لگنے سے وہ دماغی طور پر مفلوج ہوگئی تھی۔  غلط انجکشن کی تصدیق ہونے کے بعد بچی کو تیرہ اپریل کو لیاقت نیشنل اسپتال منتقل کیا گیا ۔  انجکشن بناکر دینے والے مڈوائف ثوبیہ کو اتوار کی شام کو گرفتار کیا گیا جبکہ ٹیکہ لگانے والے معیز کو چند دن پہلے حراست میں لیا گیا تھا۔  اسپتال انتظامیہ نے عمل کو معطل کرتے ہوئے واقعے پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔  نشوہ کے والد قیصر علی کا کہنا تھا کہ اسپتال انتظامیہ ان پر صلح کے لیے دباؤ ڈالتی رہی ۔

وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے بھی معاملے کا نوٹس لیا تھا، اسپتال جاکر بچی کی تعزیت بھی کی تھی۔ ترجمان وزیراعلیٰ ہاؤس کے مطابق وزیراعلیٰ سندھ کا کہنا ہے کہ نشویٰ کے بیرون ملک علاج کے لیے پلان بنایا تھا، دعا ہے اللہ پاک بچی کے والدین کو صبر عطا فرمائے، نشویٰ کے والدین کے ساتھ انصاف ہوگا۔

کوئی تبصرے نہیں

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.