فیس بک، انسٹاگرام کے لاکھوں یوزرز کے پاس ورڈز واضح ہوگئے

 A Facebook, Instagram bug exposed millions of passwords to its employees

فیس بک کے پاس ورڈز کو چھپانے والے سافٹ ویئر میں وائرس آنے کے باعث لاکھوں یوزرز کے پاس ورڈز فیس بک کمپنی کے ملازمین کے سامنے واضح ہوگئے۔ جو پاس ورڈز  سامنے آگئے وہ فیس بک، فیس بک لائٹ اور انسٹا گرا م کے یوزرز کے تھے۔

فیس بک کمپنی کے مطابق اب تک کوئی ایسا ثبوت نہیں ملا کہ یوزرز کے پاس ورڈز کا غلط استعمال کرکے ان کے اکاؤنٹس کو کسی اور نے استعمال کیا ہو۔ وائرس آنے کے باعث یہ پاس ورڈز صرف ملازمین کے سامنے واضح ہوئے تھے۔ کمپن نے کہا ہے کہ ایسی کوئی اطلاع یا ثبوت نہیں ملا کے اس کے ملازمین میں سے کسی نے قانون کی خلاف ورزی کی ہو۔

فیس بک کے مطابق اس  وائرس کے بارے میں جنوری میں معلوم ہوا تھا جس کو بعد میں درست کردیا گیا تھا۔ تاہم کمپنی نے یہ نہیں بتایا کہ جنوری میں آئے وائرس کا انکشاف اتنی تاخیر سے کیوں کیا جارہا ہے۔

فیس بک کی انجینئرنگ سکیورٹی اینڈ پرائیویسی کے نائب صدر پیڈرو کینہاٹی کا کہناہے کہ ہمارے نزدیک لوگوں کی معلومات کو محفوظ بنانے سے زیادہ اہم کچھ نہیں اور ہم اسے محفوظ بنانے کےلیے مزید بہتری لاتے رہیں گے کیونکہ یہ فیس بک میں ہماری کوششوں کا حصہ ہے۔

1 تبصرہ:

  1. فیس بک کے پاس ورڈز کو چھپانے والے سافٹ ویئر میں وائرس آنے کے باعث لاکھوں یوزرز کے پاس ورڈز فیس بک کمپنی کے ملازمین کے سامنے واضح ہوگئے۔ جو پاس ورڈز سامنے آگئے وہ فیس بک، فیس بک لائٹ اور انسٹا گرا م کے یوزرز کے تھے۔
    technology

    جواب دیںحذف کریں

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.