او آئی سی میں بھارت کو ندامت کا سامنا

 

بھارت کا ایجنڈا بری طرح ناکام ہوگیا۔ اسلامی ممالک کی تنظیم او آئی سی میں دلی سرکار کو ندامت کا سامنا کرنا پڑا۔ عرب ممالک نے بھارتی وزیرخارجہ سشما سوراج کو گھر بلاکر آئینہ دکھایا گیا۔

 او آئی سی کے اعلامیہ کے مطابق رکن ممالک نے پاکستان کےخلاف بھارتی جارحیت،پاکستان کی فضائی حدود کی خلاف ورزیوں کی سخت  الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے بھارت کو  دھمکیوں اور طاقت کا استعمال بند کرنے کا مشورہ  دیا۔


رکن ممالک نے  مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کی بھی  سخت مذمت کرتے ہوئے مقبوضہ وادی میں انسانی حقوق کی بدترین خلاف ورزیوں پر تشویش کا اظہار کیا اور کشمیری عوام کی حمایت کا اعادہ کیا۔ او آئی سی نے جنوبی ایشیا میں امن کے لیے مسئلہ کشمیر  کا حل ناگزیر قرار دیا اور عالمی برادری سے  اقوام متحدہ کی قراردادوں پر عملدرآمد کرانے کا مطالبہ کردیا۔  سشما سوراج کی اجلاس میں شرکت بھی کام نہ آئی اور تنظیم نے پاکستان  کو ایشیا میں انسانی حقوق کمیشن کا مستقل رکن منتخب کرلیا۔او آئی سی نے امن کے لیے وزیراعظم عمران خان کی کوششوں کو زبردست انداز میں سراہا۔  

واضح رہے کہ پاکستان نے بھارتی وزیرخارجہ کو او آئی سی اجلاس  وزرائے خارجہ اجلاس میں میں شرکت کی دعوت پر شدید احتجاج کیا تھا۔ وزیرخارجہ نے احتجاجاً اس اجلاس میں شرکت نہیں کی تھی۔  بھارتی وزیر اعظم اجلاس میں بطور مہمان شریک ہوئی تھیں اور پاکستان کا نام لیے بغیر سخت تنقید کی تھی۔ 

1 تبصرہ:

  1. رکن ممالک نے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کی بھی سخت مذمت کرتے ہوئے مقبوضہ وادی میں انسانی حقوق کی بدترین خلاف ورزیوں پر تشویش کا اظہار کیا اور کشمیری عوام کی حمایت کا اعادہ کیا۔ او آئی سی نے جنوبی ایشیا میں امن کے لیے مسئلہ کشمیر کا حل ناگزیر قرار دیا اور عالمی برادری سے اقوام متحدہ کی قراردادوں پر عملدرآمد کرانے کا مطالبہ کردیا۔
    Kashmir Forum

    جواب دیںحذف کریں

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.