وزیراعظم کا آبادی میں اضافہ پر قابو پانے کے لئے جامع مہم شروع کرنے کا اعلان


Prime Minister Imran Khan speaking at a symposium on population

وزیراعظم عمران خان نے ملک میں آبادی میں اضافہ پر قابو پانے کیلئے ایک جامع مہم شروع کرنے کا اعلان کیا ہے۔ 

انہوں نے یہ اعلان اسلام آباد میں لاء اینڈ جسٹس کمیشن آف پاکستان کی طرف سے  آبادی میں خطرناک اضافہ کے موضوع پر منعقد کئے گئے ایک روزہ قومی سمپوزیم کے اختتامی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔

وزیراعظم نے کہا کہ مہم کے تحت خاندانی منصوبہ بندی اور ماحول کا تحفظ تعلیمی نصاب کا حصہ بنایا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ بنگلہ دیش اور ایران کی طرز پر علماء کو اعتماد میں لیا جائے گا اور خاندانی منصوبہ بندی کے بارے میں عوام میں آگاہی پیدا کرنے کیلئے ذرائع ابلاغ کو استعمال کیا جائے گا۔ 

آبادی میں تیزی سے اضافہ پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے وزیراعظم نے اس اہم مسئلہ کے حل کیلئے کیے گئے اقدام  پر چیف جسٹس کا خصوصی شکریہ ادا کیا۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے خاندانی منصوبہ بندی کے پروگراموں پر عملدرآمد یقینی بنانے کیلئے قومی اور صوبائی سطح پر ٹاسک فورسز قائم کر دی گئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم آبادی میں اضافہ کے مسئلہ پر صوبوں کے ساتھ مل کر کام کر رہے ہیں۔

عمران خان نے افسوس ظاہرکیا کہ اس مسئلہ کو ماضی میں نظر انداز کیا گیا ۔ انہوں نے کہا کہ آبادی میں اضافے پر قابو پانے کی مہم کو کامیاب بنانے کیلئے اب معاشرے کے ہر طبقہ کو اس میں بڑھ چڑھ کر حصہ لینا ہوگا۔انہوں نے کہا کہ خاندانی منصوبہ بندی کے طریقوں کے بارے میں معلومات کی تشہیر کیلئے سوشل میڈیا سمیت جدید ٹیکنالوجی استعمال کی جائے گی۔

اس سے پہلے چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے کہا کہ آبادی کی تیزی سے بڑھتی ہوئی شرح ہمارے محدود وسائل پر شدید دباو ڈ ال رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ آبادی میں اضافے کی وجہ سے بڑھتے ہوئے استعمال کے باعث پانی جیسے ضروری وسیلہ کو پہلے ہی دباو  کا سامنا ہے۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ چالیس برس کے دوران ڈیمز تعمیر  کرنے پر کوئی توجہ نہیں دی گئی۔میاں ثاقب نثار نے کہا کہ بڑھتی ہوئی آبادی کی ضروریات پوری کرنے کے لئے ہمیں پانی کے بہتر استعمال کو فروغ دینا ہے۔

انہوں نے کہا کہ آبادی کی موجودہ شرح کو نہ روکا گیا تو تین برس میں پاکستان کی آبادی  پینتالیس کروڑ تک پہنچ سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ قومی ترقی کے لئے کم آبادی کے فوائد کے بارے میں آگاہی پیدا کرنے کیلئے میڈیا اہم کردار ادا کرسکتا ہے۔

انہوں نے پاکستان میں مدینہ جیسی ریاست کے قیام کے لئے حکومت کو عدلیہ کے مکمل تعاون کا یقین دلایا۔  

1 تبصرہ:

  1. آبادی میں تیزی سے اضافہ پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے وزیراعظم نے اس اہم مسئلہ کے حل کیلئے کیے گئے اقدام پر چیف جسٹس کا خصوصی شکریہ ادا کیا۔
    supreme court

    جواب دیںحذف کریں

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.