سپریم کورٹ نے سانحہ ماڈل ٹاون میں جے آئی ٹی تشکیل دینے پر ازخود نوٹس کیس نمٹا دیا


Supreme Court disposes of Model Town tragedy case

سپریم کورٹ نے سانحہ ماڈل ٹاون کے مقدمہ میں نئی جے آئی ٹی کے معاملہ پر حکومت پنجاب سے کہا کہ وہ اس معاملہ میں آزادانہ فیصلہ کرے، عدالت کا نئی جے آئی ٹی بنانے یا نہ بنانے سے کوئی تعلق نہیں۔

چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں عدالت عظمیٰ کے پانچ رکنی بینچ نے سانحہ ماڈل ٹاون کے  ازخود نوٹس کیس   میں نئی مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کی تشکیل سے متعلق درخواست کی سماعت کی۔ 

چیف جسٹس نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ  نئی جے آئِی ٹی بنانے میں حکومت  پنجاب جوفیصلہ کرنا چاہے وہ کرسکتی ہے جس کے بعد عدالت نے کیس نمٹادیا۔

بعدازاں پاکستان عوامی تحریک کے رہنماء ڈاکٹر طاہر القادری نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عدالت عظمی نے اپنے فیصلے سے نئی امید پیدا کی ہے۔

سترہ جون 2014 کولاہور کے علاقہ ماڈل ٹاون میں تجاوزات کے خلاف کارروائی کے دوران منہاج القران کے دفتر کے اطراف بیریئر ہٹانے سے معاملہ شروع ہوا جو سانحہ ماڈل ٹاون پر ختم ہوا۔ اس سانحہ میں چودہ افراد جاں بحق اور کئی دیگر زخمی ہوئے تھے۔

کوئی تبصرے نہیں

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.