پی ٹی آئی حکومت کا ایک اور یوٹرن، ریڈیو پاکستان کی عمارت کو لیز پر دینے کا فیصلہ واپس

Another U-Turn; PTI government withdraws notification to lease Radio Pakistan's building

حکومت نے اسلام آباد میں ریڈیوپاکستان کے نیشنل براڈ کاسٹنگ ہاؤس کو لیز پردینے کا نوٹی فکیشن  واپس لینے کا فیصلہ کیا ہے ۔

یہ فیصلہ ریڈیوپاکستان کے ملازمین کی آج پارلیمنٹ ہاؤس اسلام آباد میں وزیراطلاعات ونشریات فواد چوہدری اور وزیرمملکت علی محمد خان  کے ساتھ مذاکرات کے بعد سامنے آیا ۔

وزیراطلاعات نے مذاکرات کے دوران کہاکہ حکومت کا ریڈیوپاکستان کوختم کرنے یااس کے ملازمین میں کمی کرنے کا کوئی ارادہ نہیں ہے ۔تاہم انہوں نے کہاکہ ریڈیوپاکستان ادارے کی بحالی کیلئے خود ایک تجویز پیش کرے ۔

خبروں اور حالات حاضرہ کے ڈائریکٹر جاوید خان جدون نے وفاقی وزیر کو بتایاکہ ادارے میں بہتری لانے کے روشن امکانات موجود ہیں۔ وزیراطلاعات نے اس سلسلے میں انہیں ایک منصوبہ تیار کرنے کو کہا جو اس سال نومبر کے پہلے ہفتے میں جمع کرایاجائے گا۔

وزیرمملکت برائے پارلیمانی امور علی محمد خان نے پارلیمنٹ ہاؤس کے باہر مظاہرہ کرنے والے ملازمین سے خطاب کرتے ہوئے یقین دلایا کہ ریڈیوپاکستان کے ملازمین کو اعتماد میں لیتے ہوئے وزیراطلاعات تمام فیصلے کریں گے ۔اس کے بعد مظاہرہ کرنے والے ملازمین پرامن طریقے سے منتشر ہوگئے ۔

ریڈیوپاکستان اسلام آباد کے ملازمین حکومت کی جانب سے نیشنل براڈ کاسٹنگ ہاؤس کی عمارت کو لیز پردینے کی تجویز واپس لینے کے  فیصلے کے بعد آج سہ پہر نیشنل نیوز روم میں اکٹھے ہوئے ۔انہوں نے حکومت کے فیصلے کا خیرمقدم کیا اور وزیراطلاعات ونشریات فواد چوہدری کا شکریہ ادا کیا۔

ملازمین نے ادارے کی بحالی کیلئے ایک قابل عمل منصوبہ وضع کرنے اور اسے وزیر اطلاعات کو پیش کرنے کا عزم ظاہر کیا ۔انہوں نے ملک کا مثبت تشخص اجاگرکرنے اور ملک کی خدمت جاری رکھنے کے عزم کا بھی اظہار کیا ۔

1 تبصرہ:

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.